Shahbaz Sharif visits University of Agriculture Faisalabad.

فیصل آباد 2 مئی ( )2015 وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ زراعت ملکی معیشت میں کلیدی کردار ادا کر رہی ہے اسے ترقی دینے کے لئے پنجاب حکومت بھر پور وسائل بروئے کار لا نے میں مصروف ہے ۔ ان باتوں کا اظہار انہوں نے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد میں پنجاب حکومت کی جانب سے منظور کئے جانے والے 1000طالبات کے ہاسٹل اور پنجاب بائیو انرجی انسٹٹیوٹ کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے بطور مہمان خصوصی اپنے خطاب کے دوران کیا ۔انہوں نے کہا کہ زرعی یونیورسٹی دنیا کی 100بہترین جامعات میں شامل ہے جو کہ پوری قوم کے لئے باعث فخر ہے ۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ اسی طرح تعلیم و تحقیق میں مہارتوں کا مظاہرہ جاری رکھا گیا تو کوئی وجہ نہیں کہ یہ یونیورسٹی بین الاقوامی درجہ بندی میں صف اول کی جامعات میں اپنا مقام تسلیم نہ کرا سکے ۔وزیر اعلیٰ پنجاب نے کہا کہ یونیورسٹی کو 50کروڑ کی لاگت سے دیا جانے والا ہاسٹل کا تحفہ تعلیمی اداروں میں ایک سنگ میل ثابت ہو گا جس سے دیہی علاقے کی طالبات کو زیور تعلیم سے آراستہ ہونے میں بھرپور مدد مل سکے گی

۔ انہوں نے کہا اگرچہ خواتین تعلیمی میدان میں اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مردوں کے مقابلے میں زیادہ نشستیں حاصل کر رہی ہیں تاہم عملی میدان میں ان کی شرکت نہ ہونے کے برابر ہے ۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے کہا کہ لاہور کے بعد فیصل آباد پنجاب کا تیزی سے ترقی کرنے والا شہر بن گیا ہے جہاں 10ارب روپے کے ترقیاتی منصوبے بہت جلد مکمل ہو کر اس شہر کو بین الاقوامی سطح کے تجارتی و کاروباری مرکز کی صورت میں تبدیل کر دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ ہمارے طلبائ و طالبات دیگر زبانوں کے ساتھ ساتھ چینی زبان میں مہارت حاصل کر کے دوست ملک میں اپنے لئے مستقبل کے نئے امکانات تلاش کرنے پر بھرپور توجہ دیں ۔ انہوں نے کہا کہ بجلی ، کھیت سے منڈیوں تک سڑکیں اور تحصیل کی سطح تک پینے کے صاف پانی کی فراہمی ان کی حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے جس سے لوگوں کی زندگیوں میں آسودگی اور آسانی پیدا ہو سکے گی ۔ انہو ں نے کہا کہ چین نے 43ار ب ڈالر کی سرمایہ کاری کر کے پاکستانیوں کے دل میں محبت کے ایسے بیج بو دئیے ہیں جن کی خوشبو قیامت تک برقرار رہے گی۔ان سے پہلے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اقرا ر احمد خاں نے کہا کہ صوبے بھر میں 4 زرعی جامعات اور متعدد زرعی کالجز کام کر رہے ہیں جن کی بڑی تعداد جنوب سے تعلق رکھتی ہے ۔ انہوں نے تجویز پیش کی کہ چاول پیدا کرنے والے علاقوں اور ننکانہ صاحب میں زرعی یونیورسٹی کے سب کیمپسز قائم کئے جائیں تاکہ ان علاقوں میں تحقیق کا کلچر پروان چڑھایا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ زرعی علوم میں مسلسل جدتوں کی وجہ سے اس سال تمام بڑی فصلات کی پیداوار توقعات سے کہیں بہتر ہوئی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ بڑھتی ہوئی آبادی کی خوراک کے لئے ہمیں مزید کاوشیں بروئے کار لانا ہوں گی ۔ ڈاکٹر اقرار احمد خا ں نے کہا کہ یونیورسٹی کے سائنسدان ڈینگی پروگرام ، بائیو گیس پلانٹس ، کھیتوں سے منڈی تک سڑکوں اور جدید مویشی منڈی کے نظام میں عملی طور پر حکومت کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ 2009سے لے کر اب تک وزیر اعلیٰ پنجاب نے یونیورسٹی کو ریکارڈ ترقیاتی فنڈز مہیا کئے ہیں جو ان کی جانب سے علم دوستی کی ایک بھرپور کارکردگی ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے اس موقع پر 499 ملین روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے پنجاب بائیو انرجی انسٹیٹیوٹ اور 491ملین روپے کی لاگت سے زیر تعمیر طالبات کے ہاسٹل کا سنگ بنیاد بھی رکھااور تختی کی نقاب کشائی کی ۔